تازہ غزل (ناصر کاظمی کی زمین میں) افتخار راغبؔ( دوحہ قطر)

5
255

تازہ غزل
(ناصر کاظمی کی زمین میں)

دل کی پشت پہ کچھ لکھا تھا
شاید اُس نے دیکھ لیا تھا

آنکھ کھلی تو حیرت جاگی
کس کے پیچھے بھاگ رہا تھا

سب تھے تخت نشین کہیں کے
سب کے ہاتھ میں اک کاسہ تھا

وہ بھی تھوڑی ضدّی سی تھی
میں بھی تھوڑا پاگل سا تھا

جانے کس دن سمجھ میں آئے
میں نے کس حد تک سمجھا تھا

دل کی ڈال سے اڑ گئی چڑیا
دشتِ جاں میں ہنگامہ تھا

اندر چیخ رہا تھا کوئی
باہر کتنا سنّاٹا تھا

بیچ میں تھا اک اجلا رستہ
دونوں جانب اک چشمہ تھا

باہر تھیں دیواریں سالم
اندر سب کچھ ٹوٹ چکا تھا

اندھے بھی دیکھیں گے اک دن
اچھے دن کا خواب برا تھا

سوندھی خوش بو پھوٹی غزل سے
پہلی بارش کا چھینٹا تھا

سب کے ذہن میں تھا کچھ راغبؔ
ہر کوئی کھویا کھویا تھا

افتخار راغبؔ
دوحہ قطر

Previous articleبرصغیر کے نامور قلمکار خورشید حیات کا انٹرویو از: گُل بانو(پاکستان)
Next articleاور کتنا انتظار ؟از: محمد احسان الاسلام

5 COMMENTS

  1. Wow, wonderful weblog layout! How lengthy have you ever been blogging for?
    you made blogging glance easy. The entire glance of your web site is magnificent, as smartly as the content material!
    You can see similar here najlepszy sklep

  2. Hi! Do you know if they make any plugins to assist with Search Engine Optimization? I’m trying to get my website to rank for some targeted keywords but I’m not seeing very good success.
    If you know of any please share. Thanks! I saw similar blog here: AA List

اپنے خیالات کا اظہار کریں

Please enter your comment!
Please enter your name here