افسانچہ” پردہ” ازمحمد علیم اسماعیل

1
61

وہ ’’کڈز انگلش کانوینٹ‘‘ اسکول کے احاطے میں کھڑی تھی۔ چھٹی ہونے میں ابھی کچھ دیر باقی تھی۔ دوسرے لوگوں کی طرح وہ بھی کسی بچے کو لینے آئی تھی۔ اس احاطے میں اور بھی بہت سے لوگ بچوں کے انتظار میں کھڑے تھے۔
وہ برقعے میں تھی لیکن چہرہ کھلا تھا۔ میں دیکھتے ہی اسے پہچان گیا۔ اس کی بھی نظر جیسے ہی مجھ پر پڑی، اس نے چہرے پر نقاب لگا لیا۔ تب یہ بات میرے ذہن میں گونجنے لگی، ’’کیا برقعہ پوش عورتیں صرف جان پہچان والے مردوں سے ہی پردہ کرتی ہیں۔‘‘

بحوالہ افسانوی مجموعہ”رنجش”
٭٭٭

Previous articleجب ضمیر جاگ اٹھا…!
Next articleمیاں بیوی آپس میں کیسے رہیں۔۔قسط نمبر…….2

1 COMMENT

اپنے خیالات کا اظہار کریں

Please enter your comment!
Please enter your name here