اعظم خان ، مختار انصاری اور عتیق احمد کی بڑھی مشکلیں

0
96

20ستمبر (بلاغ 18 ڈاٹ کام) مختلف جیلوں میں بند سماج وادی پارٹی کے سینئر لیڈر اعظم خان ، ایم ایل اے مختار انصاری اور سابق ایم پی عتیق احمد کی مشکلات بڑھنے والی ہیں۔ ای ڈی منی لانڈرنگ اور بھتہ خوری کیس میں ان تینوں لیڈروں سے پوچھ گچھ کرے گی ۔عدالت سے اجازت ملنے کے بعد ای ڈی جلد ہی جیل میں ان سے پوچھ گچھ کرے گی۔ رپورٹ کے مطابق ای ڈی کی ایک ٹیم نے اعظم خان کو سیتاپور جیل میں بند پوچھ گچھ کر رہی ہے ۔ ای ڈی کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ ان تین رہنماؤں کے خلاف ماضی میں منی لانڈرنگ کیس میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ اب ای ڈی کو عدالت سے اجازت ملی ہے کہ وہ ان تینوں لیڈران سے پوچھ گچھ کرے گی۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ اس سال جولائی میں ای ڈی نے مختار انصاری کیخلاف منی لانڈرنگ کا مقدمہ درج کیا تھا۔سیتاپور جیل میں قید اعظم خان پر مبینہ کسانوں کی زمین ہتھیانے کا الزام ہے۔ الزام یہ ہے کہ رام پور میں تعمیر جوہر یونیورسٹی میں بھی غیر قانونی سرکاری زمین پر قبضہ کیا گیا تھا۔ اس کے علاوہ یونیورسٹی سرکاری رقم بھی استعمال کی گئی۔ اب ای ڈی اس معاملہ میں اعظم خان سے پوچھ گچھ کرے گی۔باندہ جیل میں بند مختار انصاری پر الزام ہے کہ انہوں نے ایک سرکاری زمین پر غیر قانونی قبضہ کیا اور اسے ایک نجی کمپنی کو 1.7 کروڑ روپے سالانہ کے حساب سے سات سال کے لیے لیزپر دیا۔

ای ڈی اس رقم اور قبضے کے معاملے میں اپنی تفتیش کرے گا۔دوسری جانب ای ڈی نے سابق ایم پی عتیق احمد کے خلاف منی لانڈرنگ کا مقدمہ بھی درج کیا تھا۔ عتیق احمد پر الزام ہے کہ گزشتہ سال پولیس نے عتیق احمد کی 16 کمپنیوں کی نشاندہی کی تھی ، جن میں سے کئی بے نامی تھیں۔ ان کمپنیوں میں نام کسی اور کا ہے لیکن بالواسطہ ان میں پیسہ لگایا گیا ہے۔ ان میں سے بیشتر کمپنیوں کا کاروبار رئیل اسٹیٹ سے جڑا ہوا ہے، یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ان کمپنیوں کے لین دین کروڑوں میں ہیں۔

Previous articleJ.N.U جواہر لال نہرو یونیورسٹی کا اہم اعلان
Next articleفوقانیہ و مولوی کا اسکروٹنی کا رزلٹ!

اپنے خیالات کا اظہار کریں

Please enter your comment!
Please enter your name here