اردو کے فروغ کے لیے انجمن ترقی اردو بہار جلد ہی اردو بیداری رتھ روانہ کرے گی: عبدالقیوم انصاری

0
68

نئی دہلی 12ستمبر (بلاغ 18ڈاٹ کام) کسی بھی قوم کے لیے زبان کی اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے انجمن ترقی اردو بہار کے سکریٹری و چیئر مین بہار اسٹیٹ مدرسہ ایجوکیشن بورڈ پٹنہ عبدالقیوم انصاری نے کہا کہ اگر اردو مرجائے گی تو ہماری ثقافت بھی مرجائے گی۔

یہ بات انھوں نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہی ۔ انھوں نے کہا کہ ہندوستان کے آئین میں یہ اختیار دیا گیا ہے کہ جہاں پر جس اسٹیٹ میں اردو پڑھنے والے ، لکھنے والے ہوں گے وہاں کی حکومت اردو کو دوسری سرکاری زبان کا درجہ قانون بناکر دے سکتی ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ جس اسکول یا مدرسہ میں اساتذہ کی زبان کمزور ہے انھیں لرننگ آئوٹ کم کے ذریعہ اسے مضبوط کیا جائے گا۔

انھوں نے کہا کہ اسی کے تحت انجمن اردو بہار کی کاوشوں سے بہار میں اردو کو دوسری سرکاری زبان کا درجہ حاصل ہوا۔ اس کے تحت گزٹ نوٹیفکشن اردو میں شائع کرنے، تمام دفاتر میں نیم پلیٹ اور شاہراہوں کے نام کو ہندی کے ساتھ اردو میں بھی لکھنے کا حق حاصل ہے۔انھوں نے کہا کہ اردو کے فروغ کے لیے وزیر اعلا نتیش کمار نے 75 ہزار پرائمری و مڈل اسکولوں میں اردو اساتذہ کے تقرر کا فیصلہ کیا ہے۔جس کے تحت 45 ہزار اردو اساتذہ کی تقرری کی جاچکی ہے۔ باقی اسکولوں میںتقرری کا عمل جاری ہے۔انھوں دیگر کاموں شمار کراتے ہوئے خاص طور سےیہ بات بھی کہی کہ بہت جلد انجمن ترقی اردو بہار کے ذریعہ اردو بیداری رتھ روانہ کیا جائے گا جو عوام میں اردو کے تئیں بیداری پیدا کرے گی۔

Previous articleوائرل بخار لے رہا ہے بچوں کی جان اب تک کئی بچوں کی ہوچکی ہیں موتیں!
Next articleدرس علم النحو ۔۔۔۔از: مفتی محمد ثناءالہدیٰ قاسمی

اپنے خیالات کا اظہار کریں

Please enter your comment!
Please enter your name here